English   /   Kannada   /   Nawayathi

زرعی قوانین کے خلاف کسانوں کا ہلابول

share with us

:یکم ستمبر 2020(فکرو خبر/ذرائع)پنجاب کے کسانوں نے زرعی قانون کے خلاف اپنی تحریک کو مزید تیز کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ مرکز کی مودی حکومت کے ذریعہ پاس تین زرعی قوانین کے خلاف پہلے تو کسانوں نے 'ریل روکو' تحریک کو غیر معینہ مدت تک کے لیے بڑھانے کا فیصلہ کیا، اور اب جمعرات سے بی جے پی لیڈروں کے گھروں کے باہر دھرنا دینے کا فیصلہ کیا ہے جس سے بی جے پی لیڈران کی مشکلیں بڑھ گئی ہیں۔ قابل ذکر بات یہ ہے کہ کسان تنظیموں نے گرام پنچایتوں سے بھی گزارش کرنے کا فیصلہ کیا ہے کہ وہ گرام سبھاؤں کے ذریعہ ان قوانین کے خلاف قرارداد پاس کریں۔

واضح رہے کہ زرعی قوانین کے خلاف تحریک کو تیز کرنے کے مقصد سے 31 کسان تنظیموں نے ہاتھ ملا لیا ہے اور بھارتیہ کسان یونین کے جنرل سکریٹری سکھدیو سنگھ کوکری کلاں کا کہنا ہے کہ "کسان ریاست میں بی جے پی لیڈروں کی رہائش گاہوں کے باہر دھرنا دیں گے۔ اس تعلق سے سابق وزیر سرجیت کمار گیانی سمیت چار بی جے پی لیڈروں کی رہائش گاہ کے باہر دھرنا دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔"

سکھدیو سنگھ نے میڈیا سے بات چیت کے دوران بتایا کہ "بھارتیہ کسان یونین کے بینر تلے کسان پٹیالہ، سنام (سنگرور)، بڈھلاڈا (منسا) اور گدّڑباہا (مکتسر) میں ریل پٹریوں کو غیر معینہ مدت تک رخنہ انداز کیا جائے گا۔ اسی طرح سے دیگر کسان تنظیمیں بھی ریاست میں کئی مقامات پر ریل روکو تحریک میں حصہ لیں گی۔" انھوں نے مزید کہا کہ موجودہ وقت میں کسان مزدور سنگھرس کمیٹی کے بینر تلے کسان 24 ستمبر سے ریاست میں امرتسر اور فیروز پور میں ریل روکو تحریک کر رہے ہیں۔

اس درمیان سکھدیو سنگھ نے ایک اہم بات یہ کہی کہ زرعی قانون کے خلاف احتجاجاً کارپوریٹ گھرانوں کی ملکیت والے شاپنگ مال اور پٹرول پمپوں کے باہر بھی مظاہرہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ کسان لیڈر کچھ کارپوریٹ گھرانوں اور ان کے پروڈکٹس کا ریاست میں بائیکاٹ کا پہلے ہی عزم ظاہر کر چکے ہیں۔

کسان مزدور سنگھرس کمیٹی کے جنرل سکریٹری سرون سنگھ پنڈھیر نے الزام عائد کیا ہے کہ مودی حکومت ان 'سیاہ قوانین' سے کچھ پرائیویٹ یونٹوں کو فائدہ پہنچانا چاہتی ہے۔ بھارتیہ کسان یونین (لاکھووال) کے جنرل سکریٹری ہرندر سنگھ لاکھووال نے بھی کہا کہ وہ ان قوانین کے خلاف گرام سبھاؤں کے ذریعہ قرارداد پاس کرائیں گے۔ بھٹنڈا میں تو کچھ پنجابی گلوکار بھی زرعی قوانین کے خلاف کسانوں کے احتجاجی مظاہرے میں شامل ہوئے۔

Prayer Timings

Fajr فجر
Dhuhr الظهر
Asr عصر
Maghrib مغرب
Isha عشا