مشن یوپی پر پرینکا گاندھی ، سیاست میں پرینکا انٹری کے بعد ایس پی بی ایس پی اتحاد میں کانگریس کے شامل ہونے کے امکانات

share with us

لکھنو:11فروری2019(فکروخبر/ذرائع)کانگریس پارٹی کی جنرل سیکریٹری بننے کے بعد پرینکا گاندھی آج پہلی بار ریاست اتر پردیش پہنچ رہی ہیں۔ جہان وہ مشن یوپی کا آغاز لکھنؤ میں روڈ شو سے کریں گی۔پرینکا گاندھی کے لکھنؤ پہنچنے کا آڈیو پیغام عوام تک پہنچ چکا ہے انہوں نے کہا کہ' میں آپ سے ملنے کے لیے لکھنؤ آرہی ہوں مجھے امید ہے کہ ساتھ مل کر ہم ایک نئی طرح کی سیاست شروع کریں گے، میرے نوجوان دوستوں، میری بہنوں اور یہاں تک کہ سب سے کمزور شخص کی آواز بھی سنی جائے گی، آئیے میرے ساتھ مل کر ایک نئے 

پرینکا گاندھی کے قومی سیاست اور خاص طور سے اتر پردیش کی سیاست میں سرگرم ہونے کے بعد اتر پردیش کی سیاست میں ایک نئی تبدیلی دیکھنے کو مل رہی ہے ۔ ذرائع کے مطابق ایس پی ۔ بی ایس پی نے اتر پردیش میں بی جے پی مخالف اتحا د کو لے کر از سر نو غور کرنا شروع کر دیا ہے اور ذرائع کے مطابق اب وہ کانگریس کو 14 پارلیمانی سیٹیں دینے پر غور کر رہے ہیں۔ ایسا نہیں ہے کہ پرینکا کے سیاست میں داخلے کے بعد صرف ایس پی ۔بی ایس پی پریشان ہیں بلکہ بر سر اقتدار جماعت بی جے پی کی بھی نیندیں اڑ گئی ہیں۔

واضح رہے کہ 12 جنوری کو مایاوتی اور اکھیلیش یادو نے مشترکہ پریس کانفرنس کر کے دونوں پارٹیوں کے اتحاد کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ دونوں پارٹیاں 38-38 سیٹوں پر انتخابات لڑیں گی اور باقی چار سیٹوں میں سے دو اتحاد میں آنے والی دوسری پارٹی کو ملے گی۔ علاوہ ازیں امیٹھی و رائے بریلی میں وہ کانگریس کے خلاف کوئی امیدوار نہیں اتاریں گے یعنی اس اتحاد میں ایک طرح سے صرف دو سیٹیں کانگریس کے لئے رکھی گئی تھیں لیکن پرینکا کے سیاست میں داخلہ کے بعد سے حالات بدلے ہوئے نظر آ رہے ہیں ۔

پرینکا گاندھی کے سیاست میں داخلہ کے بعد سے اتر پردیش کی سیاست پوری طرح گرم ہو گئی ہے اور یہ خبریں بھی عام ہو چکی ہیں کہ ایس پی -بی ایس پی اپنی انتخابی حکمت عملی میں تبدیلی پر غور کر رہی ہے۔

Prayer Timings

Fajr فجر
Dhuhr الظهر
Asr عصر
Maghrib مغرب
Isha عشا