برطانوی شہری فوج میں بھرتی ہونے سے کترانے لگے ،سپاہیوں کی قلت ہوگئی 

share with us

رائل فوج کا قلت پوری کرنے کیلئے دولت مشترکہ کے شہریوں کو بھرتی کرنے
کا فیصلہ ، خواتین کی قلت کو پورا کرنے کے لیے یہ پابندی اٹھانے کا فیصلہ بھی کرلیا گیا 


لندن :06؍نومبر2018(فکروخبر/ذرائع) برطانوی فوج اپنے شہریوں کی عدم دلچسپی کے سبب سپاہیوں کی قلت کا شکا رہوگئی، دولتِ مشترکہ کے شہریوں کو فوج میں بھرتی کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا۔تفصیلات کے مطابق برطانوی شہریوں کی فوج میں شمولیت سے عدم دلچسپی کے باعث رائل افواج کو سپاہیوں کی قلت کا سامنا ہے ، اس وقت برطانیہ کو فوری طور پر 8،200 سپاہیوں کی شدید ضرورت ہے۔رواں سال کے اوائل میں جاری کی جانے والی ایک رپورٹ کے مطابق فوجیوں کی قلت بالخصوص بحریہ اور فضائیہ کے شعبوں میں درپیش ہے۔ سنہ 2010 کے بعد سے اب تک یہ سپاہیوں کی شدید ترین قلت ہے۔اس کمی کو دور کرنے کے لیے دولت مشترکہ کے ممالک سے تعلق رکھنے والے ممالک کے شہریوں کو برطانوی فوج میں شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے،ابتدائی طورپر بھارت،آسٹریلیا،کینیا،فجی،سری لنکاکیشہری بھرتی ہوسکیں گے۔اس سے قبل دولتِ مشترکہ سے تعلق رکھنے والے وہ شہری جنہوں نے برطانیہ میں پانچ سال سے کم وقت گزارا ہو، برطانوی فوج میں جگہ بنانے کے اہل نہیں تھے۔ اس مخصو ص صورتحال کے حامل سالانہ دو سو سپاہی ہی برطانوی افواج میں جگہ حاصل کرسکتے تھے۔اب برطانوی افواج میں سروس مین اور خواتین کی قلت کو پورا کرنیکے لیے یہ پابندی اٹھانے کے لیے قانون سازی کرلی گئی ہے اور جلد ہی اس کا اطلاق ہوگا، یعنی اگر آپ دولتِ مشترکہ کے شہری ہیں تو اب آپ بھی برطانوی فوج میں اپلائی کرسکتے ہیں۔
 

Prayer Timings

Fajr فجر
Dhuhr الظهر
Asr عصر
Maghrib مغرب
Isha عشا