کاویری تنازع : سی پی آئی کے سینکڑوں کارکن گرفتار

share with us

تمل ناڈو14؍اپریل2018(فکروخبر/ذرائع)کاویری مینجمنٹ بورڈ کی تشکیل کا مطالبہ کرنے والے کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا ( سی پی آئی) کے کم و بیش 400 کارکنان کو پولیس نے آج حراست میں لے لیا جس میں 65 خواتین بھی شامل ہیں۔اطلاعات کے مطابق گرفتار ہونے والے مظاہرین میں سی پی آئی کے کارکنان ، تمل ناڈو ویواسیگل اور دیگر تنظیموں کے افراد شامل ہیں۔ یہ لوگ کاویری مینجمنٹ بورڈ کی تشکیل کے لیے میسور کی طرف ایک مارچ لے کر آگے بڑھ رہے تھے اور ان کا مقصد کرشناراجا ساگر ڈیم کا محاصرہ کرنے تھا۔سی پی آئی سمیت دیگر تنظیموں کے کارکنان ہوسر ٹاؤن میں پرانے میونسپل دفتر کے باہر جمع ہوئے جہاں انھوں نے حکومت کے خلاف نعرے بلند کیے اور بورڈ کی تشکیل کے لیے بھی نعرے بازی کی۔
سی پی آئی کے صدر کرشنانگری اور ضلع کے سابق رکن اسمبلی ٹی رامچندرن اس عظیم مارچ کی صدارت کر رہے تھےکثیر تعداد میں پولیس افسران نے ان تمام لوگوں کو ہوسر ٹاؤن کے مضافاتی علاقے میں روکا اور آگے بڑھنے پر بھی پابندی عائد کر دی۔ سی پی آئی کارکنان نے آگے بڑھنے کی کوشش کی جس کے بعد پولیس نے 400 افراد کو حراست میں لے لیا۔ پولیس نے بتایا کہ تمل ناڈو ویواسیگل سنگم تنظیم کے صدر ایس گناسکرین، جنرل سکریٹری وی دوریامنیکام، نائب صدرایم لگھومیاہ اور دیگر رہنماؤں نے حراست کی مخالفت کی اور پولیس کو روکنے کی بھی کوشش کی لیکن ان پر قابو پاتے ہوئے انہیں گرفتار کرلیا گیا ہے۔

 

Prayer Timings

Fajr فجر
Dhuhr الظهر
Asr عصر
Maghrib مغرب
Isha عشا